PM Imran Khan distributes houses, flats among labourers

  • Prime Minister Imran Khan vows to uplift weak, underprivileged segments of society.
  • He was addressing a ceremony in connection with allotment of houses and flats to the working class under the Naya Pakistan Housing project.
  • Minister for Communications and Postal Services Murad Saeed says houses to be given to those earning less than Rs0.5m.

ISLAMABAD: Prime Minister Imran Khan expressed the commitment to uplift the weak and underprivileged segments of society in a ceremony to distribute 1,500 houses and flats to labourers on Thursday.

Minister for Communications and Postal Services Murad Saeed has said the premier’s promise to provide shelter to the homeless will be fulfilled.

A ceremony for the distribution of the houses was held in Islamabad. After a brief speech by PM’s aide on Overseas Pakistanis Zulfi Bukhari, balloting for the homes was done.

PM Imran Khan handed over the keys to those whose names were selected.

Having your own home is a blessing, PM Khan said as he spoke about the impossibility of the common man to own their own home in the current economic situation.

He said the government is paying Rs. 300,000 on each flat and house. Interest rate on these houses will stay the same at 5% for the next 20 years, despite fluctuations in the country’s interest rates.

Nobody ever thought about the marginalised groups of society, the premier said.

PM Khan said there is a boom in the construction industry due to the incentives given by the present government. He said this will not only lead to wealth creation but also provide job opportunities to the youth.

‘This is the beginning of affordable housing’

In his remarks, Bukhari said in the first phase of this project completed by Workers Welfare Fund, 1,008 flats and 500 houses have been constructed.

He said these are being given to workers on the basis of proprietary rights.

In the next phase, 1,504 more units will be constructed.

He said this project is the beginning of providing low cost and affordable houses to the weak segments of society.

حکومت پاکستان کی جانب سے نیا پاکستان ہاؤسنگ پروگرام کے تحت غریبوں اور محنت کش طبقے میں گھروں کی فراہمی کا آغاز کر دیا گیا ہے۔

وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ نیا پاکستان نئی سوچ کا نام ہے، ملک میں غریب کو گھر کی فراہمی کا کبھی نہیں سوچا گیا، غریب اور محنت کش طبقے کو گھروں کی فراہمی کا منصوبہ بڑی کامیابی ہے۔

نیا پاکستان ہاؤسنگ پروگرام کے تحت محنت کش طبقے میں گھروں اور فلیٹس الاٹ کرنے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ ویژن ہے کہ ہم کمزور طبقے کو اوپر اٹھائیں گے، تنخواہ دار اور مزدور طبقے کیلئےشہروں میں گھر خریدنا ناممکن تھا۔

عمران خان نے کہا کہ تعمیراتی شعبہ ملک کی معیشت کے لیے اہم کردار ادا کررہا ہے، تعمیراتی شعبے کے فروغ سے روزگار کے مواقع بڑھتے ہیں، ہماری تعمیراتی صنعت آگے تیزی سے بڑھ رہی ہے، نجی بینک 380ارب روپے سے زائد گھروں کیلئے قرض فراہم کرے گا۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ حکومت نے عام آدمی کیلئے قرضہ لینا آسان بنایا ہے، حکومت یقینی بنائے گی کہ گھر بنانے کیلئے لئے گئے قرضے پر سود پانچ فیصد سے اوپر نہ جائے ، قرضوں کی قسطیں بیس برس تک دی جاسکیں گی۔

عمران خان نے ذلفی بخاری اور ورکرز ویلفیئر فنڈ کی ٹیم کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں، آپ نے 25 سال پرانا پروجیکٹ تیار کردیا ہے۔

عمران خان نے کہا کہ ہم کسی پر احسان نہیں کر رہے، یہ محنت کشوں کا حق ہے، ملک میں کبھی مزدور طبقے کیلئے نہیں سوچا گیا، محنت کش کرائے کے مکان میں رہتے تھے، اب کرایہ قسطوں میں جائے گا اور مکان ان کی ملکیت ہوجائے گا۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ گورنمنٹ کے کلاس 6 کے ملازمین بھی شہروں میں گھر نہیں بناسکتے، گاؤں میں گھر بنانا آسان ہوتا، لیکن شہر میں مزدور کا گھر بنانا ناممکن ہے، نیا ہاؤسنگ پروجیکٹ میں حکومت تین لاکھ کی سبسڈی دے رہی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ گھر بنانے میں تاخیر اس وجہ سے ہوئی کہ قانون عدالت سے دو سال میں کلیئر ہوا، حکومت یقینی بنائے گی کہ 5 فیصد سے زیادہ سود ادا نہ کرنا پڑے۔

عمران خان نے کہا کہ نیا ہاؤسنگ پروجیکٹ شروع ہوچکا ہے، مجھے خوشی ہے پہلی دفعہ مزدور طبقے کو گھر دے رہے ہیں، امیر ترین ملک بھی گھر نہیں بانٹ سکتے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *